یونان کے جزیرے پر پھنسے تارکینِ وطن کے انخلا کی کوششیں

یونان کے جزیرے پر پھنسے تارکینِ وطن کے انخلا کی کوششیں
یونان اور اقوام متحدہ نے یونان کے جزیرے لیزبوس پر پھنسے 25 ہزار تارکین وطن کے انخلا کے لیے اضافی عملہ اور بحری جہاز بھیجے ہیں۔
تارکین وطن کو ایتھنز پہنچانے کے لیے ایک خالی فٹبال گراؤنڈ میں مرکز بھی قائم کر دیا گیا ہے۔
پیر کو ایک یونانی وزیر ژیانس موزالس کا کہنا تھا کہ ’لیزبوس پھٹنے کے قریب ہے‘.
یونانی حکام کا کہنا تھا کہ لیزبوس میں قائم پراسسنگ مرکز ہفتے کے پانچ روز 24 گھنٹے کام کرے گا۔ ان تارکین وطن میں سے بیشتر کا تعلق شام سے ہے۔
تاہم فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف پے کی مطابق پیر کی شب درجنوں ساحلی محافظ اور مسلح پولیس اہلکار 25 ہزار تارکین وطن کو قابو کرنے میں مشکلات کا شکار رہے جب وہ ایک بحری جہاز کی جانب بڑھ رہے تھے۔
دوسری جانب سربیا سے مزید سینکڑوں تارکین وطن پولیس کی رکاوٹوں کو توڑتے ہوئے ہنگری میں داخل ہو گئے ہیں اور اب دارالحکومت بوڈاپیسٹ کی طرف جا رہے ہیں۔
اطلاعات کے مطابق اس وقت پولیس کی نگرانی میں 300 تارکین وطن موٹر وے پر بوڈاپیسٹ کی جانب رواں دواں ہیں۔

Comments are closed.