چین تیانجن دھماکوں کی آگ پر قابو نہیں پایا جا سکا

چین تیانجن دھماکوں کی آگ پر قابو نہیں پایا جا سکا
:چین تیانجن دھماکوں کی آگ پر قابو نہیں پایا جا سکا
چین کے شمالی شہر تیانجن میں ہونے والے دو دھماکوں کے بعد لگنے والی آگ پر 36 گھنٹے گزرنے کے بعد بھی قابو نہیں پایا جا سکا ہے۔
چین کے سرکاری میڈیا کے مطابق فوج کی کیمیکل ٹیم کے ماہرین جائے وقوعہ پر زہریلی گیس کے ٹیسٹ کر رہے ہیں اور امدادی کارکنوں سے کہا گیا ہے کہ وہ حفاظتی لباس پہن لیں۔
واضح رہے کہ بدھ کی شام تیانجن کے ایک گودام میں ہونے والے دھماکوں سے کم سے کم 50 افراد ہلاک اور 700 سے زائد زخمی ہو گئے تھے۔
دھماکوں سے اردگرد کی عمارتوں کو نقصان پہنچا اور پورٹ پر موجود ہزاروں گاڑیاں اور کنٹینر تباہ ہو گئے۔
ابھی تک دھماکوں کا سبب معلوم نہیں ہو سکا اور نہ ہی یہ پتہ چلا ہے کہ کیا گودام میں موجود کیمیکل کا اخراج دھماکوں کی وجہ بنا۔
چین کی سرکاری نیوز ایجنسی شن ہوا کے مطابق تلاشی کا کام کرنے والی ٹیموں نے جمعے کو ملبے سے ایک زندہ شخص کو باہر نکالا ہے۔ زندہ بچ جانے والے 19 سالہ فائر فائیٹر کا نام زو ٹی ہے۔

Comments are closed.