خیبر میں کارروائیوں میں 31 شدت پسند ہلاک‘

خیبر میں کارروائیوں میں 31 شدت پسند ہلاک‘
خیبر میں کارروائیوں میں 31 شدت پسند ہلاک‘ پاکستانی فوج نے قبائلی علاقے خیبر ایجنسی اور شمالی وزیرستان میں کارروائیوں کے دوران 31 دہشت گردوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

فوج کے شعبہ تعلقاتِ عامہ کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ بدھ کے سکیورٹی فورسز نے خیبر ایجنسی میں پاک افغان سرحدی علاقے میں کارروائی کرتے ہوئے 17 دہشت گردوں کو ہلاک کیا۔

شوال میں زمینی کارروائی کا آغاز

حکام کا کہنا ہے کہ شمالی وزیرستان کے علاقے شوال میں 14 دہشت گرد ہلاک ہوئے جبکہ ان کے متعدد ٹھکانے تباہ کیے گئے ہیں۔

آئی ایس پی آر کے ترجمان میجر جنرل عاصم باجوہ نے 21 اگست کو سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں لکھا کہ ’شوال میں زمینی آپریشن شروع ہو گیا ہے، آرمی چیف نے جلد ازجلد فوجی اہداف حاصل کرنے کی ہدایات جاری کی ہیں۔‘

آپریشن ضربِ عضب کا ایک سال مکمل ہونے پر بتایا گیا تھا کہ مختلف کارروائیوں کےدوران 2763 دہشت گردوں کو ہلاک کیا گیا ہےاور اس عرصے میں سکیورٹی فورسز کے347 افسران اور جوان بھی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے۔

دوسری جانب پاکستان کے سرکاری ٹی وی کے مطابق پاکستانی دفترِ خارجہ نے گذشتہ روز شمالی وزیرستان میں ہونے والے ڈرون حملے کی مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ ان حملوں سے مقامی آبادی میں نفرت کے جذبات پیدا ہوتے ہیں۔

نامہ نگار رفعت اورکزئی کے مطابق شمالی وزیرستان کے مکینوں کی اپنے علاقوں کو واپسی کا سلسلہ جاری ہے جبکہ کرم اور اورکزئی ایجنسی کے متاثرین کی واپسی کا اعلان ہو گیا ہے۔ متاثرین کی واپسی کا سلسلہ رواں ماہ کی 25 تاریخ کو شروع ہوگا۔

Comments are closed.