بلقان کے راستے تارکینِ وطن کی یورپ آمد کا سلسلہ جاری

بلقان کے راستے تارکینِ وطن کی یورپ آمد کا سلسلہ جاری
مشرقِ وسطیٰ کے جنگ زدہ ممالک سے تعلق پناہ گزینوں اور تارکینِ وطن کا بلقان کے راستے یورپ میں داخل ہونے کا سلسلہ جاری ہے اور قیاس ہے کہ دس ہزار کے قریب افراد گذشتہ 24 گھنٹوں میں آسٹریا پہنچے ہیں، جن میں سے بیشتر کی تعداد کروئیشیا اور ہنگری کے راستے شمالی اور مغربی یورپ پہنچنے کی کوشش کر رہے ہیں۔
مشرقِ وسطیٰ کے جنگ زدہ ممالک سے آنے والے پناہ گزینوں اور تارکینِ وطن کے مسئلے سے نمٹنے کے معاملے پر یورپی یونین کے رکن ممالک میں اختلافات برقرار ہیں۔
تارکینِ وطن کے معاملے پر مختلف حکومتوں کے درمیان اختلافات کی وجہ سے یورپ میں شمال مشرق کے راستے سے داخل ہونے والوں کو ایک ملک کی سرحد سے دوسرے ملک کی سرحد کی جانب دھکیلا جا رہا ہے۔
پناہ کی تلاش میں آنے والے ان افراد میں سے زیادہ تر کا تعلق شام، افغانستان اور عراق سے ہے اور وہ جرمنی اور سیکنڈے نیویا کے ممالک میں پناہ لینے کے خواہشمند ہیں۔
دوسری جانب یونان میں لیزبوس جزیرے کے قریب ایک کشتی ڈوبنے سے 26 تارکین وطن لاپتہ ہیں جبکہ 20 کو بچا لیا گیا ہے۔
یونانی جزیرے لیزبوس کے قریب ڈوبنے والے اس کشتی میں کوسٹ گارڈز کے مطابق 46 افراد سوار تھے جن میں سے 20 کو بچا لیا گیا ہے۔

Comments are closed.